گیت نمبر ۴۲۸
؎مُردے کون جلاتا ہے یسُوع ہے وہ نام
گُناہ کون مِٹاتا ہے یسُوع ہے وہ نام
1

لعزر اُس کو پیارا تھا بہنوں کا سہارا تھا
قبر سے باہر آ جا یسُوع نے پُکارا تھا
کفن میں لپٹا ہوا وہ نکلا جب یسُوع کا سُنا فرمان
2

بارہ برس سے خون تھا جاری
بڑھتی گئی اُس کی بیماری
چھو کر پلو شفا پائی اُس وقت مِلا آرام
3

یسُوع المسیحا اُمید جہاں ہے
اُس کے بن یہ دُنیا ویراں ہے
میری خاطر اُس نے اپنا بیٹا کیا قربان

Scroll to Top