گیت نمبر ۳۷
1

نام   یسُوع   کا  ہے کیا  شیریں
سُن       لو      اہل      اِیمان
دِلگیر   کو   بخشا    ہے   تسکین
غمگین          کو        اِطمینان
2

ہیں  راحت   پاتے   اور   آرام
سب    ماندے     اور    زیربار
دُور  کرتا  ہے  وہ  خوف  تمام
مسیح     کا     نام    ہر     بار
3

وہ باندھتا ہے دِل کے زخموں کو
بُجھاتا      دِل    کی     پیاس
ہے   سیری  بخشتا  بُھوکوں   کو
اور    ننگوں     کو       لباس
4

اَے   نام  عزیز  میری  چٹان
میری    پناہ      اور     ڈھال
تُو  فضل   کے   خزانے    سے
کر       مجھے     مالا        مال
5

یُسوع   تُو  میرا   ہے    بادشاہ
نبی        اور     کاہن     بھی
ہے   بے   دِلوں  کی  اُمید  گاہ
حق   ،    راہ      اور     زِندگی
6

ہے  کوشش  میری  سب   بیکار
ناقص        میرے        خیال
ہے   بے  دِلوں  کی   اُمید  گاہ
تب      ہوں      گا      نہال
7

اُس  وقت  تک  تیرا  پیار  بیان
ہر    وقت    مَیں   کروں    گا
اور تیرے نام سے موت کی آن
تسلی           پاوں            گا

Scroll to Top