گیت نمبر ۲۰۰ (ب)
اِک تاج بناکے پرستش کا تیرے سر پہ سجاتے ہیں
نئے نغمے بھی نئی غز لیں بھی تیرے چرنوں میں لاتے ہیں
1

تیرے نقش قدم پہ شمس و قمر
تیری راہ گُزر یہ شام و سحر
ہم خوشیوں کے نئے پھولوں سے تیری راہیں سجاتے ہیں
2

سب تاج یسُوع تیرے قدموں تلے
ساری دُنیا میں تیرا ہی دیپ جلے
ہم نگر نگر میں آشاوں کے دیپ جلاتے ہیں
3

تجھ سے آباد دل کے گھرانے ہوئے
تیرے وعدوں سے روشن زمانے ہوئے
ہم چاہتوں کے نئے جذبوں سے تجھے پیار دکھاتے ہیں

Scroll to Top